جاسوسی سافٹ ویئر”پگاسس” کس طرح موبائل فونزسے ڈیٹا ہیک کرتا ہے؟

پیگاسس نامی سافٹ وئیر کے ذریعے دنیا بھر میں پچاس ہزار سے زائد افراد کی جاسوسی کا انکشاف کیا ہے۔

5

جاسوسی سافٹ ویئر”پگاسس” کس طرح موبائل فونزسے ڈیٹا ہیک کرتا ہے؟

پیگاسس نامی سافٹ وئیر کے ذریعے دنیا بھر میں پچاس ہزار سے زائد افراد کی جاسوسی کا انکشاف کیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق یہ سافٹ ویئر کس طرح کام کرتا ہے اور کیسے موبائل فونز میں انسٹال ہوکر تمام ڈیٹا لیک کردیتا ہے اس کی تفصیلات منظر عام پر آگئی ہیں۔

رپورٹ میں بتایا گیا کہ اسرائیلی کمپنی کا تیارہ کردہ پیگاسوس نامی سافٹ ویئر ایسا میل ویئر ہے جو آئی فونز اور اینڈرائیڈ آلات کو متاثر کرتا ہے۔

خیال رہے اس کے ذریعے میسیجز، فوٹوز، ای میلز،فون کالز اور مائیکرو فون کو خفیہ طور پر ہیک کیا جاتا ہے۔

یاد رہے کہ سب سے پہلے ایک انٹرنیٹ لنک صارف کے موبائل پر بھیجا جاتا ہے اس لنک کو کلک کرنے والے صارف کے موبائل میں یہ سافٹ ویئر انسٹال ہوجاتا ہے جس کا علم موبائل استعمال کرنےوالے صارف کو بھی نہیں ہوتا۔

سافٹ ویئر موبائل میں انسٹال ہونے کے بعد کمانڈ اینڈ کنٹرول سرورز سے رابطہ قائم کرتا ہے

بعد ازاں ان کمپیوٹرز اور ڈومینز کے ذریعے صارف کی ڈیوائس کو نہ صرف کنٹرول کیا جاتا ہے بلکہ اس میں ڈیٹا بھیجنے اور وصول کرنے کیلئے بھی استعمال کیا جاتا ہے۔


جانیں کم عمری میں اپنا گھر چھوڑنے والے یہ 5 مشہور اداکارکون ہیں


سافٹ ویئر کے انسٹال ہونے کے بعد صارف کے موبائل فون میں موجود تمام ڈیٹا، ای میلز، خفیہ پاس ورڈز وغیرہ لیک ہونے لگتی ہیں۔

اور اس وجہ سے صارف 24 گھنٹے میں اپنے موبائل فون پر جو بھی چیز استعمال کرتا ہے

یہ سافٹ ویئر اس کی نگرانی کرتے ہوئے موبائل فون کو ایک 24/7 جاسوسی ڈیوائس میں تبدیل کردیتا ہے۔
یہ سافٹ ویئر انتہائی کم بینڈ وتھ استعمال کرنے اور انتہائی خفیہ طور پر بغیر کوئی ثبوت چھوڑے ڈیٹا اپنے کمانڈ اینڈ کنٹرول سرورز کو بھیجنے میں ماہر تھا۔

سافٹ ویئر کمپنی این ایس او نے اس جاسوسی سافٹ ویئر پیگاسس کا جدید ورژن بھی تیار کررکھا تھا جسے ‘زیروکلک’ کا نام دیا گیا ہے۔

اس جدید سافٹ ویئر میں کسی صارف کی جاسوسی کیلئے اس کے موبائل پر لنک بھی نہیں بھیجا جاتا اور نہ اس کے لنک پر کلک کرنے کا انتظار کیا جاتا ہے۔

بلکہ یہ زیرہ کلک سافٹ ویئر کسی صارف کے موبائل میں موجود ان زیرو ڈے خطرات کو استعمال کرکے فون کو ہیک کرتا ہے جنہیں صارف کی جانب سے ٹھیک نہ کیا گیا ہو۔

واضح رہے بین الاقومی خبر رساں اداروں نے انکشاف کیا ہے کہ اسرائیلی کمپنی این ایس او کا پیگاسس نامی سافٹ وئیر دنیا بھر میں پچاس ہزار سے زائد افراد کی جاسوس کیلئے استعمال ہورہا ہے۔

دوسری جانب اس سافٹ ویئر کو بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے اپنے مخالفین کے خلاف استعمال کرتے رہے ہیں،

پاکستان میں یہ سافٹ ویئر نواز شریف حکومت کے دور میں عمران خان کے خلاف بھی استعمال کیا گیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.